نیپرا نے بجلی کی قیمت میں 3 روپے 27 پیسے فی یونٹ اضافہ کر دیا

اسلام آباد:نیشنل الیکٹرک پاور ریگولیٹری اتھارٹی (نیپرا) نے بجلی کی قیمت میں اضافہ کر دیا۔نیپرا نے بجلی کی قیمتوں میں اضافے کا نوٹیفکیشن جاری کر دیا۔ جس کے مطابق کراچی کے صارفین کے لیے بجلی 3 روپے 27 پیسے فی یونٹ مہنگی کی گئی ہے اور بجلی کی قیمت میں اضافہ جنوری کی فیول پرائس ایڈجسٹمنٹ کی مد میں کیا گیا۔
نیپرا حکام کے مطابق بجلی کی قیمتوں میں اضافے کا اطلاق اپریل کے بلوں میں ہو گا اور کراچی کے بجلی صارفین پر 3 ارب 58 کروڑ روپے کا اضافی بوجھ پڑے گا۔دوسری جانب نیشنل الیکٹرک پاور ریگولیٹری اتھارٹی (نیپرا) نے ملک بھر میں بجلی کی قیمت میں مزید اضافے کی تجویز پیش کر دی۔فروری کے ماہانہ فیول ایڈجسٹمنٹ پر نیپرا میں سماعت مکمل ہو گئی۔ جس میں بجلی کی قیمت میں 4 روپے 68 پیسے اضافے کی تجویز دی گئی۔
چیئرمین نیپرا نے کہا کہ ریلیف پیکج کے باعث صارفین پر اضافی بوجھ نہیں پڑے گا۔نیپرا حکام کے مطابق فروری میں ہائیڈل سے 14 فیصد کم بجلی پیدا کی گئی اور اس کمی کو فرنس آئل اور ایل این جی پیداوار سے پورا کیا گیا لیکن عالمی سطح ایندھن کی قیمتوں میں اضافہ ہوا۔نیپرا سندھ کے رکن رفیق شیخ نے کہا کہ سابقہ ایڈجسٹمنٹ کا آڈٹ کرائیں جبکہ سی پی پی اے اور نیپرا کے اعداد و شمار میں ہر ماہ بڑا فرق آتا ہے۔ نیپرا حکام کے مطابق ایل این جی کی قلت سے ایک ارب 37 کروڑ 40 لاکھ روپے کا بوجھ پڑا ہے اور بجلی صارفین پر 17 پیسے فی یونٹ کا اضافی بوجھ آیا۔
چیئرمین نیپرا نے کہا کہ ملک میں 5 ہزار 372 میگاواٹ کا شارٹ فال ہے اور فیول کی قلت سے 2 ہزار 139 میگاواٹ بجلی کم پیدا ہو رہی ہے۔ کے ٹو ٹرپ ہوا ہے جبکہ کے تھری ابھی مکمل آپریشنل نہیں ہوا اور گزشتہ روز چشمہ میں سی ون میں بھی کوئی فالٹ آیا ہے۔انہوں نے کہا کہ اس وقت ملک میں 5 ہزار 372 میگاواٹ کا شارٹ فال ہے جبکہ حکومت 40 ہزار میگاواٹ کی صلاحیت کا دعویٰ کرتی ہے لیکن اگر 5 سات ہزار میگاواٹ کم ہو بھی گئی تو فرق نہیں پڑنا چاہیے تھا۔

اپنا تبصرہ بھیجیں