ایل جی نے موبائل فونز کی دنیا کی خیر آباد کہہ دیا

سیئول : الیکٹرانکس اشیا بنانے والی جنوبی کوریا کی مایہ ناز کمپنی ‘ایل جی’ نے اربوں روپوں کا مالی خسارہ برداشت کرنے کے بعد اپنی موبائل مینوفیکچرنگ کو بند کرنے کا اعلان کر دیا۔

غیر ملکی خبر رساں ایجنسی کی رپورٹ کے مطابق کمپنی کی جانب سے جاری بیان میں کہا گیا ہے کہ 6 سال سے مسلسل خسارے کا سبب بننے والے موبائل ڈویژن کو مکمل ختم کیا جا رہا ہے۔ایل جی نے اپنے ایک بیان میں کہا ہے کہ موبائل ڈویژن کی وجہ سے اسے تقریباً ساڑھے چار ارب ڈالر کا نقصان برداشت کرنا پڑا ہے۔کمپنی کا کہنا ہے کہ وہ مخصوص خطے کے موجودہ موبائل فون صارفین کو ایک وقت تک سروسز سپورٹ اور سافٹ ویئر اپ ڈیٹس فراہم کرے گی۔

ایل جی نے موبائل بنانے والی بعض دیگر کمپنیوں کے مقابلے میں الٹرا وائڈ اینگل کیمرے سمیت دیگر جدید ٹیکنالوجیز متعارف کرائی تھیں۔ اپنی انہی جدت اور نت نئی ایجادات کے سبب سال 2013 میں ایک موقع پر ایل جی، سام سنگ اور ایپل کے بعد دنیا کا تیسرا بڑا اسمارٹ فون مینوفیکچرر بن گیا تھا۔تجزیہ کاروں نے کمپنی کی چینی حریفوں کے مقابلے میں مارکیٹ میں تجربے کی کمی پر تنقید بھی کی ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں