پنجاب میں8 مئی سے مکمل لاک ڈاؤن کا فیصلہ

لاہور: پنجاب حکومت نے 8 مئی سے 16مئی تک صوبے میں مکمل لاک ڈاؤن کا فیصلہ کیا ہے ۔ شہریوں کی نقل و حمل محدود کرنے کیلئے ہر قسم کی پبلک ٹرانسپورٹ، سیاحتی مقامات بند رہیں گے۔

فیصلے کے مطابق شہروں کےداخلی اور خارجی راستوں پر چیک پوائنٹس قائم کئے جائیں گے۔ چیک پوائنٹس پر پولیس، رینجرز اور فوج تعینات کی جائے گی۔ یہ اہم فیصلہ صوبائی وزیر صحت ڈاکٹر یاسمین راشد کی زیر صدارت سول سیکرٹریٹ میں منعقد اجلاس میں کیا گیا۔ چیف سیکرٹری پنجاب، اعلیٰ سول و عسکری حکام نے اجلاس میں شرکت کی۔

ڈاکٹر یاسمین راشد کا کہنا ہے کہ کورونا وباء پر قابو پانے کیلئے اگلے 15 سے 20 دن نہایت اہم ہیں۔ شہری کورونا پر قابو پانے کیلئے حکومتی کوششوں کا ساتھ دیں۔ عوام عید سادگی سے منائیں۔ احتیاطی تدابیر پر عمل کر کے ذمہ دار شہری ہونے کا ثبوت دیں۔

چیف سیکرٹری نے ہدایت دی کہ عید کے موقع پر زیادہ چھٹیاں دینے کا مقصد لوگوں کی نقل و حمل کو محدود کرنا ہے۔ احتیاطی تدابیر کی اہمیت سے متعلق شعور و آگاہی کو بڑھایا جائے۔ شہری عید کی چھٹیوں کے دوران غیر ضروری سفر سے گریز کریں۔ این سی او سی کی ہدایت کے مطابق چھٹیوں کےدوران پارکس، سیاحتی مقامات کو مکمل بند رکھا جائے۔

دوسری جانب این سی او سی نے لاک ڈاؤن میں استثنیٰ رکھنے والے کاروبار کے بارے میں بھی بتا دیا۔ ٹویٹ کے مطابق گروسری شاپس، بیکریاں اور ٹیک اوے کی اجازت ہو گی۔ انٹرنیٹ اور تمام ٹیلی کام کمپنیاں بھی کام جاری رکھ سکیں گی۔ میڈیا انڈسٹری سے وابستہ افراد کو بھی نقل و حمل کی اجازت ہو گی۔

اپنا تبصرہ بھیجیں