ماڈل نایاب سے ملنے والا آخری شخص کون تھا؟ بڑی پیش رفت سامنے آگئی

لاہور: ڈیفنس میں قتل ہونےوالی ماڈل نایاب کےقتل کیس میں اہم پیشرفت سامنے آگئی، پولیس نے مقتولہ کےسوتیلے بھائی کابیان قلمبندکرلیا۔ نایاب سےملاقات کرنےوالا وہ آخری شخص تھا۔

ایس پی کینٹ انوسٹی گیشن نویدارشادکےمطابق تفتیشی ٹیم نے مقتولہ نایاب کے بھائی علی کابیان قلمبندکرلیاہے۔اس نےبتایاکہ قتل کی رات مقتولہ اپنےدوستوں کی پارٹی پرایک فارم ہاؤس گئی، جہاں اسکا جھگڑاہوگیا۔جھگڑے کے بعد نایاب پارٹی چھوڑ کرباہر آگئی اوراپنے سوتیلے بھائی علی کوفون کیا۔ علی اس کے بلاوےپرفارم ہاؤس پہنچ گیا اورنایاب کواپنےساتھ لیکرروانہ ہوگیا۔ راستےمیں علی نے نایاب کوآئس کریم بھی کھلائی اورپھرڈیفنس میں واقع اسکےگھرچھوڑکرواپس چلاگیا۔

پولیس نے مقتولہ نایاب سےجھگڑاکرنےوالےدوستوں کوبھی شامل تفتیش کرلیاہے۔ایس پی انوسٹی گیشن نےبتایاکہ انکے بیانات کی روشنی میں حقائق سامنے لائےجائیں گے۔پولیس نے کال ڈیٹا سے وقوعہ کے روز کا ریکارڈ بھی حاصل کرلیاہے۔قتل کی رات مقتولہ کیساتھ رابطہ میں رہنے والوں کو پہلے ہی شامل تفتیش کرلیاگیاتھا۔نایاب کے قتل کا مقدمہ بھی اسکے سوتیلے بھائی کی مدعیت میں درج کیاگیاتھا۔ تفتیش کےمطابق اسکاسوتیلہ بھائی علی وہ آخری شخص تھا جونایاب سےملا۔

اپنا تبصرہ بھیجیں