عمران خان کٹھ پتلی وزیراعظم کشمیر کو صوبہ بنانا چاہتا ہے: مریم نواز

اسلام آباد: مسلم لیگ ن کی نائب صدر مریم نواز نے کہا ہے کہ آزاد کشمیر میں بھی کٹھ پتلی وزیراعظم لانے کا فیصلہ ہو چکا ہے، عمران خان اپنی مرضی کا وزیر اعظم لا کر کشمیر کو پاکستان کا صوبہ بنانا چاہتا ہے۔

فارورڈ کہوٹہ میں انتخابی جلسے سے خطاب کرتے ہوئے مریم نواز نے وزیراعظم عمران خان پر تنقید کرتے ہوئے کہا کہ تمہاری کامیاب خارجہ پالیسی یہ ہے کہ چین نےسی پیک پرکام بند کر دیا۔انہوں نے کہا کہ نوازشریف کشمیریوں کا مقدمہ لڑیں گے، سلیکٹرکی طرح مودی کے حوالے نہیں کریں گے، دشمن کے 5 دھماکوں کے جواب میں نوازشریف نے 6 دھماکے کیے تھے۔ ان کا کہنا تھا کہ نوازشریف نے کبھی یہ رونا نہیں رویا کہ مودی میرا فون نہیں اٹھاتا، نوازشریف کا کشمیرکےساتھ خون کا رشتہ ہے۔ مریم نواز نے کہا کہ برہان وانی کا مقدمہ لڑنے والے نوازشریف کو غدار کہا گیا، پاکستان میں جو جتنا بڑا محب وطن ہوتا ہے اسے اتنا ہی بڑا غدار کا لقب دیا جاتا ہے۔انہوں نے کہا کہ غداری کا لقب دینے والو دیکھو نواز شریف کی بیٹی آج ایل اوسی پر کھڑی ہے۔

مریم نواز نے کہا کہ تمام تر سرکاری پیسے خرچ کرنے کے باوجود باغ میں عمران خان کے جلسے میں کوئی نہیں آیا، باغ والوں نے عمران خان کے جلسہ میں نہ جا کرانہیں مسترد کر دیا، نوازشریف اپنی جماعت کو ٹکٹ دیتے ہیں بیچتے نہیں ، جس نے رشوت دی وہ آج عمران خان کے ساتھ بیٹھا ہے، باغ میں تحریک انصاف کےامیدوار تنویرالیاس نے 2016 میں نوازشریف سے پچاس کروڑ روپے فنڈ دینے پر ٹکٹ مانگی تھی، باغ میں تحریک انصاف کے امیدوار نے ایک افسر کو ایک ارب کی رشوت دی۔ مجھے خوشی ہے کہ میں کسی اے ٹی ایم کے پاس نہِیں گئی۔

مریم نواز نے کہا کہ آزاد کشمیر میں ووٹ چوری کرکے کٹھ پتلی حکومت لانے کا فیصلہ ہوچکا ہے، عمران خان اپنی مرضی کا وزیر اعظم لا کر کشمیر کو پاکستان کا صوبہ بنانا چاہتا ہے، جعلی لیڈر، جعلی ووٹ، جعلی منصوبے اور جعلی دعوے کرنے والے یاد رکھیں کہ آزاد کشمیر میں تمہارا کوئی دعوی نہیں چلےگا۔ ککشمیریوں کا مقدمہ عمران خان کو کیا لڑنا ہے، وئی ایک ہمسایہ ملک بتادیں جو اس نااہل حکومت کے ساتھ کھڑا ہو، عمران خان کی کامیاب خارجہ پالیسی یہ ہے کہ چین نے سی پیک پر کام بند کردیا ہے، نواز شریف کے دور میں سرمایہ کاری لانے والا چین اب تحقیقاتی ٹیمیں بھیج رہاہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں