جھوٹے لوگ کبھی قوم نہیں بنا سکتے: وزیر اعظم عمران خان

وزیر اعظم عمران خان نے کہا ہے کہ بڑا مافیا کہتا ہے ہمیں این آر او دو، اور یہ قانون کی حکمرانی نہیں چاہتے۔ملک سے باہر بیٹھے افراد ایک رسید بھی نہیں دے سکے کہ پیسہ کدھر سے آیا۔کبھی جھوٹے لوگ قوم نہیں بنا سکتے۔

ڈیرہ اسماعیل خان میں کسان کنونشن سے خطاب کرتے ہوئے وزیراعظم عمران خان نے کہاکہ مافیاز کہتے ہیں کہ ہمیں این آر او دو اور غریب کو پکڑو۔ مافیا کرپٹ نظام سے فائدہ اٹھا رہا ہے۔ماضی کےحکمرانوں نےملکی نظام کومضبوط نہیں ہونےدیا، رسیدیں دینے کی بجائے باہر بیٹھ کر تقریریں کی جا رہی ہیں، کبھی جھوٹے لوگ قوم نہیں بنا سکتے۔ ملک سے باہر بیٹھے لوگ اربوں کی پراپرٹی بنا گئے. یورپ میں الیکشن میں دھاندلی کی سوچ بھی نہیں ہے، ہمیں مضبوط قوم بننے کے لیے کردار کی ضرورت ہے۔

دنیا کی تاریخ پڑھی ہے، ریاست مدینہ میرے ایمان کا حصہ ہے،اس کے اصول بڑے انقلابی تھے،ان لوگوں میں سے نہیں جو اسلام کو ذاتی مفادات کے لیے استعمال کرتے ہیں،دین کی پیروی نہ کرنے کی وجہ سے ہمارے حالات ابتر ہیں۔پاکستان بنا تو آبادی 4 کروڑ تھی، آج 22 کروڑ ہے،آبادی کو کنٹرول کرنے کے لیے اقدامات کرنا ہوں گے،آبادی بڑھنے کی وجہ سے گندم منگوانا پڑی، اس مرتبہ فصل بہتر ہوئی ہے۔ملک میں 50 سال بعد ڈیم بن رہے ہیں،ہمیں پانی کو محفوظ بناناہوگا،آنے والے وقتوں میں پانی کے مسائل پیداہوں گے،دنیامیں قیمتیں بڑھنےسےپاکستان میں بھی مہنگائی ہوئی۔

وزیراعظم نے کہا کہ زراعت پر تحقیق کرنے کی ضرورت ہے،پاکستان میں زیتون کی کاشت کا انقلاب آ رہاہے،قبائلی اضلاع میں اراضی کے مسائل ہیں ،وزیراعلیٰ کو حل کرنے کی ہدایت دی ہے۔وزیراعظم نے کہا کہ آج کسانوں کے پاس بڑا پیسہ گیا،شوگر مافیاکسانوں کوپیسہ نہیں دیتاتھا،ہم نے قانون سےزورلگاکر دلوایا۔ہمارےپاس زمینیں ہیں ہمیں عقل کا بہتراستعمال کرکے خود کفیل بنناچاہیے،اناج اگانے سےفرق نہیں پڑے گالیکن امپورٹ سے فرق پڑے گا،ذرخیز زمین کے باوجود 40لاکھ ٹن گندم امپورٹ ہوئی۔

اپنا تبصرہ بھیجیں