Major-Muhammad-Akram-Shaheed

1971 کی جنگ میں جان کا نذرانہ پیش کرنے والے میجر محمد اکرم کا 49 واں یوم شہادت

1971کی پاک بھارت جنگ میں جرات اور بہادری کی اعلیٰ مثال قائم کرنے والے میجر محمد اکرم کا انچاسواں یوم شہادت آج منایا جارہا ہے۔نشان حیدر کا اعزاز پانے والے میجراکرم کو پاک فوج کی جانب سے شاندار الفاظ میں خراج تحسین پیش کیا گیا ہے۔

میجر محمد اکرم 4 اپریل 1938 کو ضلع گجرات میں پیدا ہوئے، انہوں نے 1963 میں پاک آرمی میں کمیشن حاصل کیا، 1971 کی جنگ میں میجر محمد اکرم نے 5 دسمبر کو مشرقی پاکستان کےعلاقے ہلی کےمحاذ پر بھارت کے خلاف جوانمردی سے لڑتے ہوئے جام شہادت نوش کیا۔

انہوں نے 1965 کی جنگ میں بھی شرکت کی اور کئی محاذوں پر ہندوستان کی فوج کا مقابلہ کیا۔میجرمحمد اکرم کو خراج عقیدت پیش کرنے کیلئے جہلم میں یادگار اور لائبریری بنائی گئی جہاں ان کے یوم شہادت پر خاندان کے لوگ اکٹھے ہوتے ہیں۔ میجرمحمد اکرم شہید کو لازوال قربانی پرنشان حیدر سے بھی نوازا گیا، انہیں ’’ہیرو آف ہلی‘‘ کے لقب سے بھی یاد کیا جاتا ہے۔

دوسری جانب ڈی جی آئی ایس پی آر نے سماجی رابطے کی ویب سائٹ پر میجر اکرم شہید نشان حیدر کی عظیم قربانی پر انہیں خراج عقیدت پیش کرتے ہوئے کہا کہ میجر اکرم شہید نے بہادری سے مقابلہ کرتے ہوئے دشمن کے کئی حملے پسپا کیے اور ہلی کی جنگ میں دشمن کو بھاری نقصان پہنچایا، یہ مثالی جرات مادر وطن کے محافظوں کا طرہ امتیاز ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں